زلزلے سے تھوڑی دیر پہلے ہسپتال میں خاتون کیساتھ کیا ہورہا تھا


خوشاب نیوز ڈاٹ کام) ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال جوہرآباد میں اس وقت دلچسپ صورتحال پیدا ہو گئی جب موضع اُتراء کی رہائشی ایک خاتون کوثر بی بی نے ہسپتال کے لیبر روم کی بجائے کوریڈور میں بچے کو جنم دیا۔ بتا یا جاتا ہے کہ حبیب اﷲ اُتراء کی اہلیہ کوثر بی بی کو اس کی رشتہ دار خواتین ڈلیوری کیلئے جب ضلعی ہیڈ کوارٹر ہسپتال لے کر پہنچیں تو ہسپتال کی گائنا کالوجسٹ لیڈی ڈاکٹر افشیں لیبر روم میں ایک ڈلیوری کیس میں مصروف تھی اور ہسپتال کے سٹاف نے کوثر بی بی کو انتظار کرنے کو کہا جب ڈلیوری کا وقت قریب آیا تو اُنھوں نے ایک بار پھر ہسپتال سٹاف سے استدعا کی کہ اسے لیبر روم منتقل کیا جائے لیکن ہسپتال کی نرسنگ سٹاف نے بے رُخی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر اُنھیں جلدی ہے تو اسے نجی ہسپتال میں لے جائیں۔ کوثر بی بی دردِ زہ کی حالت میں جب تڑپتے ہوئے لیبر روم کی انتظار گاہ سے کوریڈور میں آئی تو وہیں پر اُس نے بچے کو جنم دے دیا۔ جس کے بعد خاتون کے لواحقین نے ہسپتال انتظامیہ کے خلاف شدید احتجاج کیا اور اُسے بروقت لیبر روم منتقل نہ کرنے اور ڈلیوری کی سہولیات مہیا نہ کرنے پر ہسپتال انتظامیہ کیخلاف شدید نعرہ بازی کی۔ یہ بات قابل ذکرہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی ہدایات کی روشنی میں پنجاب بھر کے تمام سرکاری ہسپتالوں میں خواتین کو ڈلیوری کیلئے بلا معاوضہ خدمات مہیا کی جاتی ہیں۔ اس ضمن میں جب ہسپتال انتظامیہ سے رابطہ کیا گیا تو ہسپتال کے میڈیکل سپریٹنڈنٹ ڈاکٹر نذر حیات مجوکہ نے کہا کہ ضلعی ہیڈ کوارٹر ہسپتال جوہرآباد میں صرف ایک لیبر روم ہے جو کوثر بی بی کی آمد سے پہلے ہی انگیج تھا اس لئے اُسے لیبر روم منتقل نہ کیا جا سکا اس میں ہسپتال سٹاف کی کوئی غفلت یا کوتاہی شامل نہیں۔
;
زلزلے سے تھوڑی دیر پہلے ہسپتال میں خاتون کیساتھ کیا ہورہا تھا زلزلے سے تھوڑی دیر پہلے ہسپتال میں خاتون کیساتھ کیا ہورہا تھا Reviewed by Khushab News on 8:57:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.