ضلع کے گرلز و بوائز کالجز کے ادبی مقابلہ جات



خوشاب نیوز ڈاٹ کام)ضلع خوشاب میں وزیر اعلی پنجاب کے پروگرام قرات اور نعت کے مقابلہ جات میں ضلع بھر میں میل اور فی میل کالجز کے طالباءاور طالبات نے اپنی بھر پور تیاری کے ساتھ حصہ لیا -گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج جوہر آباد میں طلبا ءاور گورنمنٹ کالج برائے خواتین خوشاب میں طالبات کے مقابلہ جات کی تقریبات کا انعقاد ہوا -گورنمنٹ کالج برائے خواتین خوشاب میں ای ڈی او (سی ڈی) نبیلہ ملک اور گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج جوہرآباد میں پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر فتح محمد ملک نے مہمانان خصوصی کے فرائض انجام دیئے- ان تقریبات میں کالج کے پرنسپل صاحبان ،لیکچراز،ججزاور اعتراضات اٹھانے والی کمیٹی کے ممبران اورطلباءو طالبات نے شرکت کی -نتائج کے مطابق قرات کے مقابلوں میں گورنمنٹ کالج برائے خواتین خوشاب کی طالبہ حفظہ تسمیعہ سجاد نے فسٹ ،گورنمنٹ کالج جوہرآباد کی طالبہ رافعہ بتول نے سیکنڈ ،گورنمنٹ کالج نوشہرہ کی طالبہ سدرہ عروج نے تھرڈ پوزیشن حاصل کی - نعت کے مقابلوں میں گورنمنٹ کالج خوشاب کی طالبہ حراءبشیر نے اول ،گورنمنٹ کالج نوشہرہ کی طالبہ راحیلہ سلطان نے دوسری جبکہ گورنمنٹ کالج نورپورتھل کی طالبہ فوزیہ نورین نے تیسری پوزیشن حاصل کی -گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ بوائز کالج جوہر آباد میں منعقدہونے والی تقریب میں قرات کے مقابلوں میں گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج جوہرآبادکے طالب علم عبدالرحمن نے پہلی ،گورنمنٹ کالج قائدآباد کے طالب علم شکیل احمد نے دوسری ،گورنمنٹ کالج نورپورتھل کے طالبعلم حافظ محمد وقاص نے تیسری پوزیشن حاصل کی -نعت خوانی کے مقابلوں میں گورنمنٹ کامرس کالج جوہرآباد کے طالب علم محمد بلال نے فسٹ ،گورنمنٹ کالج جوہر آباد کے سید نوید عباس نے سیکنڈ اور گورنمنٹ کالج جوہرآباد کے طالب علم نسیم شہزاد نے تھرڈ پوزیشن حاصل کی -تقریب میں بتایا گیا کہ ضلعی سطح پر فسٹ پوزیشن حاصل کرنے والے طلباءو طالبات ڈویژ نل سطح کے مقابلوں میں حصہ لیں گے اور 26 مارچ کو فائینل تقریب پرائز ڈسٹری بیوشن کا انعقاد ایوان اقبال لاہور میں ہو گا -جس میں وزیر اعلی پنجاب میل اور فی میل کیٹگریز کی فسٹ پوزیشن ہولڈر کو ایک لاکھ روپے سیکنڈ کو 75 ہزار روپے جبکہ تھرڈ پوزیشن پر آنے والوں کو 50 ہزار روپے انعام دیں گے -

اشتہار

;
ضلع کے گرلز و بوائز کالجز کے ادبی مقابلہ جات ضلع کے  گرلز و بوائز کالجز کے ادبی مقابلہ جات Reviewed by Khushab News on 5:50:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.