فحاشی کے مبینہ اڈے پر چھاپہ پولیس کو مہنگا پڑگیا



خوشاب نیوزڈاٹ کام)ایڈیشنل سیشن جج جوہرآباد نے عظمت کالونی کے رہائشی ایک شخص سخی محمد اور اس کی اہلیہ کو فحاشی کا اڈا چلانے کے مقدمہ میں مبینہ طور پر ملوث کرنے پر ڈی پی او خوشاب فیصل گلزار‘ ایس ایچ او تھانہ سٹی جوہرآباد امجد جلال اور اے ایس آئی طارق ندیم اور کانسٹیبل شاہ نواز کو 7اپریل کو عدالت میں طلب کر لیا۔ یہ کاروائی سخی محمد کی جانب سے معروف قانون دان عبدالقیوم برہان کی وساطت سے دائر کی جانیوالی درخواست کی روشنی میں کی گئی۔ درخواست میں بتایا گیا ہے کہ پچیس مارچ کو پولیس نے سائل کے گھر عظمت کالونی جوہرآباد میں کوئی چھاپہ مار کاروائی نہیں کی اور نہ ہی سائل کے گھر سے لڑکیاں برآمد ہوئی ہیں۔ اے ایس آئی طارق ندیم اور کانسٹیبل شاہ نواز نے انسپکٹر امجد جلال کو غلط رپورٹ دے کر ہمارے خلاف مقدمہ رجسٹرڈ کرایا۔ حقیقت یہ ہے کہ پچیس مارچ کو ساڑھے تین بجے شاہدرہ

لاہور سے تسمیہ اور مزمل دختران محمد رمضان اپنی والدہ شازیہ بی بی کے ہمراہ لاری اڈا جوہرآباد پر اُتریں جو موضع لال حسین جوہرآباد میں ارشاد بی بی کے ہاں بطور مہمان ملنے آ رہی تھیں۔ ارشاد بی بی اُنھیں لینے کیلئے لاری اڈا پر موجود تھی۔ جونہی وہ لاری اڈا جوہرآباد پر اُتریں تو ملزمان نے تسمیہ ‘ مزمل اور ارشاد بی بی کو زبردستی پکڑ کر رکشے میں بٹھایا اور اُنھیں تھانہ سٹی لے جا کر بند کر دیا اور ایس ایچ او کیساتھ ملی بھگت کر کے ان کے خلاف بدکاری کا اڈا چلانے کا جھوٹا مقدمہ درج کیا۔ اس مقدمہ میں درخواست دہندہ اور اس کی بیوی زرینہ کوثر کوبھی ملوث کیا گیا ہے۔ درخواست میں بتایا گیا کہ 26مارچ کو الصبح اے ایس آئی طارق اور کانسٹیبل شاہ نواز ایک لیڈی کانسٹیبل کے ہمراہ درخواست دہندہ کے گھر میں آئے اور سائل کی زوجہ کو زبردستی تھانے لے گئے جو اس وقت شاہ پور جیل میں بند ہے۔درخواست میں بتایا گیا ہے کہ سال اور اس کی زوجہ زرینہ بی بی بے گناہ ہیں اور اُنھیں ناحق اس مقدمہ میں ملوث کیا گیا ہے اس لئے ہمارے خلاف درج کیا جانیوالا جھوٹا مقدمہ خارج کیا جائے اور اے ایس آئی طارق و کانسٹیبل شاہ نواز کیخلاف حسب ضابطہ کاروائی عمل میں لائی جائے۔
اشتہار

;
فحاشی کے مبینہ اڈے پر چھاپہ پولیس کو مہنگا پڑگیا فحاشی کے مبینہ اڈے پر چھاپہ پولیس کو مہنگا پڑگیا Reviewed by Khushab News on 7:26:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.