ڈی سی او کنزہ مرتضیٰ نے مجھے ہراساں کیا، افسر کا الزام


dco kinza
Foto file
خوشاب نیوز ڈاٹ کام)سینئر سول جج جوہرآباد راؤ مبشر حسن نے رشوت خوری کے الزام میں گرفتار کئے جانیوالے محکمہ بلڈنگ کے ایکسئن رفعت شکیل کا مزید دو یوم کا جسمانی ریمانڈ دے دیا ہے۔ دریں اثناء ڈی سی او خوشاب کنزہ مرتضیٰ نے محکمہ بلڈنگ کے دفتر پر انٹی کرپشن ٹیم کی چھاپہ مار کاروائی کا نوٹس لیتے ہوئے اس واقعہ کی تحقیقات کا حکم دے دیا اور ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر نادیہ شفیق کو انکوائری آفیسر مقرر کیا گیا 
اس خبر کو بھی پڑھیں:  تنقید سے گھبرانے والی نہیں، کنزہ مرتضیٰ
ہے انکوائری آفیسر نادیہ شفیق 16مئی کو اس واقعہ کی تحقیقات کریں گی۔ اُدھر سرکل آفیسر انٹی کرپشن ملک طارق اعوان نے اس چھاپہ مار کاروائی کے بعد ضلعی انتظامیہ کی جانب سے انٹی کرپشن ٹیم کو مبینہ طور پر ہراساں کرنے کی ڈی سی او کنزہ مرتضیٰ کے خلاف باقاعدہ رپٹ درج کر لی ہے رپٹ میں کہا گیا ہے کہ ڈی سی او خوشاب نے چھاپہ مار کاروائی کے بعد اُنھیں دفتر میں بلا کر ہراساں کیا۔

khushabnews
;
ڈی سی او کنزہ مرتضیٰ نے مجھے ہراساں کیا، افسر کا الزام ڈی سی او کنزہ مرتضیٰ نے مجھے ہراساں کیا، افسر کا الزام Reviewed by Khushab News on 8:30:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.