ضلع خوشاب،سورج سوا نیزے پر، بجلی نہ پانی عوام قیامت سے دوچار


khushab weather
Foto file
نوشہرہ وادی سون ، سوڈھی جے والی اور جوہرآباد سے نمائندگان 
خوشاب نیوز ڈاٹ کام) گرمی کی شدت میں اضافہ ہوتے ہی بجلی کے ٹرانسفارمر جلنا شروع ہوگئے موضع اوچھالی کے محلہ چونترہ کا ٹرانسفارمر جل جانے سے مکین مسلسل دو روز سے پریشانی کا سامنا کررہے ہیں مساجد میں پانی نایاب ہوگیا کاروبار ٹھپ ہوگیا ہے مکین سراپا احتجاج ہیں سماجی کارکن ملک شیر محمد سلفی کا کہنا ہے کہ واپڈا والے ٹرانسفارمر مرمت کی قیمت ہزاروں روپے مانگ رہے ہیں نوشہرہ کے محلہ سدال میں وولٹیج کی کمی سے شہری عاجز آگئے ہیں پانی کی موٹریں چلنا بند ہوگئی ہیں موضع سھبرال میں تین ٹرانسفارمر کا لوڈ ایک ٹرانسفارمر نے اٹھا رکھا ہے جو کسی بھی وقت جل سکتا ہے اور پورا شہر تاریکی میں ڈوبنے کا خدشہ ہے اہل علاقہ صوفی شیر محمد ،قاضی تنویر ،ملک محمد اقبال نے واپڈا حکام سے مطالبہ کیا کہ رمضان المبارک کے مقدس ماہ سے پہلے پہلے سب ڈویژن نوشہرہ کے تمام فیڈرز سے کم وولٹیج والے ٹرانسفارمر تبدیل کرکے ہائی وولٹیج والے ٹرانسفارمر نصب کئے جائیں ایس ڈی او واپڈا کا کہنا ہے کہ گرمی کے بڑھتے ہی فیسکو کے پاس ہزاروں ٹرانسفارمر مرمت کے لئے آتے ہیں اور اگر پرائیویٹ دوکان سے مرمت کرائے جائیں تو صارفین کو ٹرانسفارمر کی مرمتی کیلئے کہا جاتا ہے۔سوڈھی جے والی سے نمائندہ خصوصی غلام شبیر کے مطابق سوڈھی جے والی کے نواحی گاؤں کلیال میں پچھلے چارپانچ دن سے ٹرانسفارمرخراب ہے اور واپڈاوالے خواب خرگوش کے مزے لے رہے ہیں،گرمی کی شدت سے اہل دیہہ خصوصًا بچوں کابہت براحال ہے اوپر سے مچھروں کی بہتات نے ناک میں دم کر رکھا ہے،غریب عوام کا کوئی پرسان حال احسان احمدمغل اور اہل کلیال نے واپڈا حکام سے پرزوراپیل کرتے ہوئے کہا کہ خدارا ہم پہ رحم کیاجائے اورجلدازجلدبجلی کی فراہمی یقینی بنائی جائے اورٹرانسفارمر کومرمت کیاجائے جوہرآباد سے نامہ نگار کے مطابق ضلع خوشاب میں سورج آگ برسانے لگا‘ گرمی کی شدت میں اضافہ کیساتھ ہی ضلعی ہیڈ کوارٹر ہسپتال جوہرآباد میں گرمی سے متاثرہ مریضوں کی لائنیں لگ گئیں مریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد اور بیڈز کی کمی کے باعث ہسپتال انتظامیہ کو مریضوں کو سہولیات مہیا کرنے میں شدید دشواریاں حائل ہیں ہسپتال میں گنجائش سے ڈیڑھ گنا زائد مریض زیر علاج ہیں اور کسی بھی وارڈ میں مزید مریضوں کے داخلہ کی گنجائش نہیں بالخصوص زنانہ وارڈ میں ایک ایک بیڈ پر دو ‘ دو مریض زیر علاج ہیں۔ اس ضمن میں جب ہسپتال انتظامیہ سے رابطہ کیا گیا تو ہسپتال کے ایڈیشنل ایم ایس ڈسٹرکٹ راجہ غنی مسعود عالم نے بتایا کہ محکمہ صحت کے کیریٹیریا کے مطابق ہر ضلعی ہیڈ کوارٹر ہسپتال 225بستروں پر مشتمل ہوتا ہے لیکن ضلعی ہیڈ کوارٹر ہسپتال جوہرآباد گذشتہ 16برسوں سے 125بستروں پر کام کر رہا ہے اور اسے ابھی تک اپ گریڈ نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے یہ ہسپتال ضلع بھر کے مریضوں کے انڈور علاج کی ضروریات پوری نہیں کرتا۔ اُنھوں نے کہا کہ موسم گرما میں مریضوں کی تعداد تقریبا دو گنا بڑھ جاتی ہے اس لئے مریضوں کی اکثریت علاج سے محروم رہ جاتی ہے۔ انجمن تحفظ حقوقِ شہریاں جوہرآباد کے جنرل سیکرٹری رانا سلیم الرحمن نے اس صورتحال پر شدید ردِ عمل کا اظہار کرتے ہوئے محکمہ صحت کے ارباب اختیار سے مطالبہ کیا ہے کہ ضلعی ہیڈ کوارٹر ہسپتال جوہرآباد میں محکمہ صحت کے کیریٹیریا کے مطابق 100بستروں کا اضافہ کیا جائے۔
khushabnews
;
ضلع خوشاب،سورج سوا نیزے پر، بجلی نہ پانی عوام قیامت سے دوچار ضلع خوشاب،سورج سوا نیزے پر، بجلی نہ پانی عوام قیامت سے دوچار Reviewed by Khushab News on 11:05:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.