آزاد کشمیرکا ایک حلقہ یا پورا پاکستان؟





خوشاب نیوز ڈاٹ کام ) چوہدری طالب حسین رچیال نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر کا حلقہ ایل اے 30 جموں ون کو صرف پنجاب کے علاقوں تک محدود کیا جائے ۔ بیڈ فورد سٹی ا نگلینڈ سے فون پر خوشاب نیوز سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ متذکرہ حلقہ کشمیری متاثرین پر مشتمل ہے لیکن ستم ظریفی یہ ہے کہ اس حلقہ کو پنجاب ، سندھ، کراچی اور بلوچستان کوئٹہ کے علاقوں میں مقیم تمام کشمیریوں پر مشتمل ایک حلقہ بنا دیا گیا ہے جو کہ سراسر غیر منطقی ہے کیونکہ اسطرح نہ تو امیدوار کے لیے اتنے وسیع و عریض حلقہ میں انتخابی مہم چلانا ممکن ہے اور نہ ہی کوئی عام آدمی اس حلقہ سے الیکشن لڑنے کا سوچ سکتا ہے کیونکہ حلقہ کی وسعت کے باعث صرف پیسے والا امیدوار ہی الیکشن میں حصہ لے سکتا ہے دوسری طرف ووٹر کے لیے بھی الیکشن کے بعد منتخب ہو نیوالے اپنے نمائندے ایم ایل اے سے ملنا ممکن نہیں۔ چوہدری طالب حسین نے حکومت پاکستان ، حکومت آزاد کشمیر اور الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیاہے کہ ایل اے 30کی نئی حلقہ بندی کی جائے اور اسکو صرف پنجاب میں مقیم کشمیریوں تک محدود کیا جائے جبکہ کراچی اور کوئٹہ میں مقیم کشمیریوں کے لیے الگ حلقہ تشکیل دیا جائے۔چوہدری طالب حسین نے مزید کہا کہ ہم اہلیان حلقہ ایل اے 30آزاد کشمیر عرصہ پچاس سال یعنی ساٹھ کی دہائی سے اپنے وطن سے اپنی مٹی سے دور اور باپ دادا کے ورثہ سے بھی محروم ہیں ستم کی یہ انتہا ہیکہ ہم اپنی آواز بھی حکام بالا تک نہیں پہنچا سکتے جس کی سب سے بڑی وجہ الیکشن اور نمائندگی کا ناقص اور نرالا نظام ہے۔حلقہ ایل اے 30 کے ووٹر کشمیر اور پاکستان کے مختلف صوبوں میں مقیم ہیں جنہیں اپنے نام نہاد منتخب نمائندے تک کبھی رسائی حاصل نہیں ہوتی۔جب تک اس نظام میں اصلاحات نہ ہونگی اور مناسب حلقہ بندی نہ ہو گی ایک ووٹر کو اس کا حق ملنا ناممکن ہے۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ ضلع خوشاب میں بھی کشمیریوں کی بڑی تعداد مقیم ہے اور آزاد کشمیر کے چند روز بعد ہو نے والے الیکشن کے لیے یہاں بھی دو پولنگ اسٹیشن بنائے گئے ہیں۔ چوہدری طالب حسین رچیال کا تعلق بھی ضلع خوشاب میں مقیم کشمیری برادری سے ہے۔
khushabnews
آزاد کشمیرکا ایک حلقہ یا پورا پاکستان؟ آزاد کشمیرکا ایک حلقہ یا پورا پاکستان؟ Reviewed by Khushab News on 8:46:00 PM Rating: 5

No comments:

loading...
Powered by Blogger.