وادی سون کی سڑکیں کس کے حوالے کردی گئیں


خوشاب نیوز ڈاٹ کام)ڈسٹرکٹ کوآرڈینیشن آفیسر خوشاب کنزہ مرتضیٰ نے ضلعی بینالمذاہب ہم آہنگی کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا ہے کہ محرم الحرام کے دوران مسلم اور غیر مسلم ا و ر تمام مسالک ضلع میں امن کے استحکام کے لئے سابقہ روایات اور ضابطہ اخلاق کی مکمل پاسداری کریں اور کسی قسم کی نئی روایات کا اضافہ نہ کریں۔ڈی سی او کانفرنس ہال جوہرآباد میں اجلاس کی صدارت کررہی تھیں ۔ اجلاس میں مختلف مکتبہ فکر اور عیسائی بھائیوں سمیت مختلف مذاہب کے لوگوں کے علاوہ اے ڈی سی بہزاد عادل اور مختلف محکموں کے افسران موجود تھے ۔ ڈی سی اور نے کہا کہ آپ ضلع کے مستقل رہائشی ہیں نیز آپ اپنے خاندانوں اور بچوں اور دیگر لوگوں کے تحفظ کے لئے ضلعی انتظامیہ اور پولیس سے مکمل تعاو ن کریں انھوں نے کہا کہ ہر فرد کو اپنے طریقے سے عبادت کرنے کا پورا پورا حق ہے تاہم وہ اپنے تحفظ کے لئے قانون ، طے کردہ طریقہ کار اور اوقات کار پر پوری طرح عمل کریں ۔بصورت دیگر بیرونی شرپسند عناصرہمارے امن میں خلل ڈال سکتے ہیں اجلاس میں ڈی سی او نے محرم الحرام کے جلوسوں ، روٹس ، سی سی ٹی وی کیمروں جنریٹروں اور دیگر متفرق انتظامات کے حوالے سے تفصیلاًگفتگوکی اور اس ضمن میں کمیٹی کے ممبران سے رائے بھی حاصل کی ۔ اجلاس میں ڈی سی اونے کہا کہ اگلے ہفتے تمام مسالک کے علماء کرام اور عیسائی برادری پر مشتمل ایک سیمنار بھی کروایا جائے گا جس میں ضلع کے کونے کونے میں امن کا پیغام پہنچایا جائیگا ۔اجلاس میں مسیحی برادری اور دیگر ممبران کمیٹی نے اپنے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کروائی ۔قبل ازیں سکیورٹی کے پیش نظرڈی سی اوآفس ، ریسٹ ہاؤس کی چار دیواری فوری بنوانے ا ور ڈی ایچ کیو ہسپتال میں ایمبولینس پورچ ، ڈاکٹرز کے کمرے اور دیگر تعمیرات جلد مکمل کرنے کی ہدایات دی گئیں ۔ ڈویژنل کمیشن کی ہدایت پر سوڈھی جئے والی روڈ اوروادئ سون کی سڑکات جو ٹورازم ڈیپارٹمنٹ کے حوالے کی گئیں اور جوہرآباد میں ڈرین اور سڑکات کے حوالے سے فوری تخمینہ جات بنوانے اور فوری رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی گئی۔ بعدازاں ڈسٹرکٹ ایمرجنسی بورڈ کے اجلاس کا بھی انعقاد ہوا جس میں محرم الحرام کے حوالے سے تمام حفاظتی تدابیر اختیار کرنے اور انتظا مات کے ضمن میں گفت و شنید ہوئی ۔

khushabnews
وادی سون کی سڑکیں کس کے حوالے کردی گئیں وادی سون کی سڑکیں کس کے حوالے کردی گئیں Reviewed by Khushab News on 4:01:00 PM Rating: 5

No comments:

loading...
Powered by Blogger.