مقامی اخبار کی دلچسپ ہیڈلائین اور کڑی تنقید



خوشاب نیوز ڈاٹ کام)چیئرمین ضلع کونسل خوشاب کے انتخاب کو الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے کالعدم قرار دیئے جانے کا فیصلہ ضلع خوشاب کے سیاسی اور صحافتی حلقوں میں سب زیادہ زیر بحث موضوع ہے اور مقامی صحافی اس پر اپنے انداز سے ضلع کی سیاست پر اس فیصلے کے اثرات بارے تبصرے اور تجزیئے کررہے ہیں ۔کھلے عام مہر لگانے اور دیگر ممبران سے مہریں لگوانے پر احسان ٹوانہ مقامی میڈیا کی تنقید کی زد میں ہیں ایک مقامی ہفتہ روزہ نے اپنی تازہ ترین اشاعت میںاحسان ٹوانہ کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے نہایت دلچسپ سرخی کچھ یوں جمائی۔’’ہم پہ احسان جو نہ کرتے تو یہ احسان ہوتا!!!‘‘اخبار نے اپنے تجزیہ میں مزید لکھا ہے کہ اللہ کی تدبیر پر سب غالب ہے ،انسان سوچتا کچھ اور ہے اور ہوتا کچھ اور ہے۔21دسمبر تک احسان ٹوانہ ضلع خوشاب کیدانشمند لیڈر کے طور پر ابھررہے تھے ۔نامعلوم کس نے انکی مت ماردی کہ اپنے سیاسی دشمن خود بن گئے اور آج جن پر انہوں نے احسان کیا وہ بھی چیخ چیخ کر کہہ رہے ہیں ہم پہ احسان جو نہ کرتے تو احسان ہوتا۔احسان ٹوانہ جب ووٹ دینے کے لیے نکلے تو انہوں نے بلوچ گروپ اور اپنے دیگر ساتھیوں کے ووٹ پکے کرنے کے لیے اعلان کردیا کہ سمیرا ملک کواوپن ووٹ دینے ہیں اور پھر سمیرا ملک کیمپ میں انکا جو تاریخی و فقید المثال استقبال کیا گیا اس سے انکے جذبے کو جلا ملی اور وہ ایک فاتح کی حیثیت سے ووٹ ڈالنے گئے انہوں نے یہ بھی نہ دیکھا کہ رواداری بھی کوئی شے ہوتی ہے اور قانون بھی اپنی جگہ موجود ہوتا ہے۔انہوں نے اپنے ساتھیوں سمیت ٹھکا ٹھک مہریں لگانا شروع کردیں اسکے اس انداز میں تقریباََ 22ووٹ شناخت کراکر سمیر ملک کو ڈالے گئے۔امیر حیدر سنگھا اور انکے پولنگ ایجنٹ وارث بگھور یہ سارا سماں دیکھتے رہے الیکشن کرانے والوں نے انکی ایک نہ سنی تاہم چپکے چپکے قانونی تقاضے پورے کرنے میں کا میاب رہے انہوں نے اپنی صداقت کا قانونی ثبوت بنوالیااور اگلے روز باضابطہ کاپیاں حاصل کرنے کے بعد ملک وارث کلو کی قیادت میں قانونی ٹیم نے اس مہارت سے کیس لڑا کہ ایسی مثال پیش کردی کہ مدتوں دھاندلی کے کیسوں میں بطور حوالہ پیش ہوتی رہے گی۔

نوٹ : اس تجزیہ سے خوشاب نیوز کا کلی یا جزوی طور متفق ہونا ہرگز ضروری نہیں اور متذکرہ بالا خبر میں بیان کیے گئے الفاظ و خیالات ،خوشاب نیوز ڈاٹ کام کی پالیسی کا حصہ نہ ہیں بلکہ اس خبر کو محض قارئین کے لیے اس لیے شائع کیا جارہا ہے کہ دیگر مقامی اخبارات و صحافی حالیہ انتخابات کو کس طرح دیکھ رہے ہیں۔
محترم قارئین اگرکلک کرنے پر اسطرح کا پیج نظر آئے اور آپ کو خبر کی تفصیلات پڑھنے میں دشواری کا سامنا ہے تو نیچے دیئے گئے طریقہ کار پر عمل کریں



مقامی اخبار کی دلچسپ ہیڈلائین اور کڑی تنقید مقامی اخبار کی دلچسپ ہیڈلائین اور کڑی تنقید Reviewed by Khushab News on 1:27:00 PM Rating: 5

No comments:

loading...
Powered by Blogger.