دنیا بھر میں ضلع خوشاب سے نمک سپلائی ہوتا ہے مگر اسکے مکین۔۔۔

خوشاب نیوز ڈاٹ کام) ڈپٹی کمشنر خوشاب امجد بشیر نے کہا پہاڑوں کے کرشڈنمک کا استعمال چھوڑیں اور اپنے بچوں کو دماغی عوارض سے بچائیں ضلع خوشاب میں آیوڈین ملے نمک کی ترسیل کو ہر صورت ممکن بنایا جائے تا کہ ہماری عوام اور نوجوان نسل اس کے برے اثرات سے محفوظ رہ سکے ۔آیوڈین کی کمی سے ہونے والے نقصانات کے پیش نظر محکمہ ہیلتھ کے زیر ا ہتمام ڈپٹی کمشنر خوشاب امجد بشیر کی زیر صدارت آج ڈی سی کمپلیکس میں ایک اجلاس منعقد ہو ا جس میں چیف ایگزیکٹو ہیلتھ آفیسر نذرحیات مجوکہ ،ڈاکٹر عشااللہ،راجہ شکیل امجد ڈپٹی ڈی ایچ او، ڈاکٹر احسان ،ڈسٹرکٹ کوآرڈینیٹرآئی آرایم این سی ایچ (IRMNCH )ڈاکٹر خالد سعید اعوان ،میڈم سبیکا ڈسٹرکٹ سینیٹری انسپکٹر اسد حیات قریشی، انجمن
 تاجران کے رانا سلیم الرحمن نیو ٹریشنز اور ڈسٹرکٹ انفارمیشن آفیسر تابندہ امجد نے شرکت کی ۔اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیلتھ ڈاکٹر نذرحیات مجوکہ نے جسم میں آیوڈین کی ضرورت اور اہمیت اوراس کی کمی سے انسانوں پر ہونے والے برے اثرات اور نقصانات پر تفصیل سے روشنی ڈالی اور بتایا کہ سندھ کے پی کے اور بلوچستان کی اسمبلیوں میں آیوڈین کے متعلق قانون سازی ہو چکی ہے اور 2012 سے پنجاب میں بھی قانون سازی کی گئی اس سلسلے میں محکمہ ہیلتھ اور ایم این سی ایچ کی خدمات قابل قدر ہیں ۔انہوں نے مزید بتایا کہ قائد آباد وہ تحصیل ہے جہاں سے پورے پاکستان کو نمک سپلائی کیا جاتا ہے اور بدقستمی سے آیوڈین ملے نمک سے محروم سب سے زیادہ ضلع خوشاب ہے کیونکہ یہاں کے لوگ پہاڑوں سے نمک کے ڈھیلے گھروں میں پیس کر نمک کی کمی کو پورا کر لیتے ہیں ۔اجلاس میں مزید بتایا گیا کہ آیو ڈ ین کی کمی کی وجہ سے وٹامن اے کی کمی واقعہ ہوتی ہے جس سے بچوں میں اندھا پن اور عورتوں میں آئرن اور زنک کی کمی سے انیمیا اور گلہڑ کی بیماریاں ہو سکتی ہیں اس کے علاوہ بھوک کا نہ لگنا قد کا نہ بڑھنا اور جسمانی نشوونما کا نہ ہونا شامل ہے ۔آیوڈین کی کمی سے بچے کی ذہنی صلاحیت اور آئی کیو لیول متاثر ہونے سے بچے تعلیم میں بہت پیچھے رہ جاتے ہیں اور معاشرے کی ترقی میں حائل ہوتے ہیں اسی طرح خواتین میں زچگی کے مسائل بھی جنم لیتے ہیں ۔ راجہ شکیل امجد نے آیوڈین کے استعمال پر روشنی ڈلتے ہوئے بتایا کہ پاکستان میں ہر شخص 10 گرام نمک روزانہ استعمال کرتا ہے سال کا ساڈھے تین کلو نمک استعمال کرتا ہے اور پوری زندگی میں اسے صرف 40 روپے کے آیوڈین کی ضرورت پڑتی ہے یوں وہ اپنی پوری زندگی محفوظ طریقے سے گزار سکتا ہے مزید بتایا گیا کہ سب کو نمک میں آیوڈین کی مقدار کم از کم  15پی پی ایم لینی چاہئے اجلاس میں محکمہ صحت اور نیوٹریشیز ،سینٹری انسپکٹرز ،اور پنجاب فوڈ اتھارٹی کی اب تک کی کاوشوں کو سراہا گیا تجاویز دی گئیں کہ ڈپٹی کمشنر خوشاب اس سلسلے میں آیوڈین والے نمک کی فروخت کو ہر ممکن یقینی بنانے کے لیے حکم نامہ جاری کریں ،کریانہ کی دوکانوں کو چیک کیا جائے ڈی او انڈسٹریز ،این جی اوز ،محکمہ ایجوکیشن ،لائیوسٹاک اورمیڈیا سے باقاعدہ تعاون لیا جائے اور آیوڈین کے بغیر نمک کی فروخت کے خلاف بھاری جرمانے اور سزائیں مقررکی جائیں تاکہ اپنی نسل کو آیوڈین ملے نمک کے عدم استعمال سے روکاجا سکے اور ان کا مستقبل محفوظ کیا جاسکے - 

دنیا بھر میں ضلع خوشاب سے نمک سپلائی ہوتا ہے مگر اسکے مکین۔۔۔ دنیا بھر میں ضلع خوشاب سے نمک سپلائی ہوتا ہے مگر اسکے مکین۔۔۔ Reviewed by Khushab News on 4:44:00 PM Rating: 5

No comments:

loading...
Powered by Blogger.