یوم پاکستان تجدید عہد کا دن ہے، آصف بھا

خوشاب نیوز ڈاٹ کام) یوم پاکستان کی ایک  تقریب ضلع کونسلضلع خوشاب میں  میں چیئرپرسن ضلع کونسل محترمہ سمیرا ملک کی زیر صدارت منعقد ہوئی جس میں صوبائی وزیر ملک محمد آصف بھا نے بطور مہمانِ خصوصی شرکت کی۔ تقریب میں مسلم لیگ ن کے ضلعی صدر سینیٹر ڈاکٹر غوث محمد نیازی‘ قومی اسمبلی کے رُکن ملک محمد عزیر خان‘ ڈپٹی کمشنر امجد بشیر‘ ضلع کونسل کے وائس چیئرمین ملک مسعود نذیر راجڑ
 سمیت  سمیرا ملک اور آصف  بھا گروپ کے اراکین ضلع کونسل ‘ مختلف محکموں کے افسران ‘ بلدیاتی اداروں کے چیئرمینوں‘ وائس چیئرمینوں اور کونسلروں سمیت مختلف مکاتب فکر کی ایک ہزار سے زائد شخصیات شریک تھیں۔ تقریب کا آغاز پرچم کشائی سے ہوا چیئرپرسن ضلع کونسل محترمہ سمیرا ملک نے قومی پرچم لہرایا۔ اس موقع پر قومی ترانہ بجایا گیا ‘ غبارے چھوڑے گئے اور امن کی علامت کے طور پر کبوتر اُڑائے گئے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر ملک آصف بھا نے کہا کہ قراردادِ پاکستان 23مارچ 1940ء کو منظور ہوئی اور سات سال کے مختصر عرصہ میں چار سو الفاظ پر مشتمل اس قرار داد کے مقاصد کو مسلمانوں نے حاصل کر لیا یہ ایک عالمی ریکارڈ ہے۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے محترمہ سمیرا ملک نے کہا کہ تاریخ عالم گواہ ہے کہ کسی قوم کو آزادی پلیٹ میں رکھ کر پیش نہیں کی گئی بلکہ اس کے کیلئے جدوجہد کا طویل اور دُشوار گزار سفر طے کرنا پڑا۔ مسلمانانِ ہند نے آگ اور دریا کو عبور کر کے مالی و جانی نقصان اٹھایا اور دشوار ترین سفر طے کر کے آزادی حاصل کی۔ 
اس لئے ہر محب وطن شہری کی ذمہ داری ہے کہ وہ آزادی کے تحفظ کیلئے اپنی توانائیاں بروئے کار لائے۔ سینیٹر ڈاکٹر غوث محمد نیازی نے اپنے خطاب میں کہا کہ 23مارچ ہماری تاریخ کا عہد ساز دن تھا جس کو قومی سطح پر منانا ہم سب کا فریضہ ہے۔ اُنھوں نے کہا کہ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف وطن عزیز کو 20ترقی یافتہ ممالک میں شامل کرنے کیلئے دن رات جدوجہد کررہے ہیں او رملک و قوم کی ترقی و خوشحالی کا سفر جاری ہے۔اسکے علاوہ رکن قومی اسمبلی عزیر خان ، وائس چیئرمین ضلع کونسل ملک مسعود نذیر راجڑ، ضلعی چیئرمین زکواۃ عشر کمیٹی چوہدری ارشد محمود ایڈووکیٹ نے بھی خطاب کیا۔معزز مہمانانِ گرامی کے اعزاز میں ظہرانہ بھی دیا گیا۔
;
یوم پاکستان تجدید عہد کا دن ہے، آصف بھا یوم پاکستان تجدید عہد کا دن ہے، آصف بھا Reviewed by Khushab News on 5:05:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.