ضلع کونسل کے اجلاس میں پانامہ فیصلے کی بازگشت

خوشاب نیوز ڈاٹ کام)ضلع کونسل خوشاب کا اہم اجلاس ضلع کونسل کمپلیکس کے کانفرنس ہال میں وائس چیئرمین ملک مسعود نذیر راجڑ کی زیر صدارت منعقد ہوا جس میں پارلیمنٹیرین گروپ سے وابستہ اراکین ضلع کونسل سمیت تمام ممبران شریک تھے۔ تاہم چیئرپرسن ضلع کونسل محترمہ سمیراملک مصروفیات کے باعث اجلاس میں شریک نہ ہو سکیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ملک مسعود نذیر راجڑ نے کہا کہ عوام کا معیارِ
 زندگی بلند کرنا اور اُنھیں حکومتی پالیسیوں کے ثمرات سے مستفید کرنا ضلع کونسل کی اولین ذمہ داری ہے انشاء اﷲ دیہی علاقوں کی پسماندگی کے خاتمہ کیلئے بلا تفریق اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ اجلاس میں ضلع کونسل کے اہم امور کا جائزہ لیا گیا اور وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف کیساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔ اجلاس میں ارکانِ ضلع کونسل نے ضلع کونسل ہال میں اجلاس کے انعقاد پر اعتراض کیا کہ یہ جگہ اجلاس کیلئے ناکافی ہے ‘ اس لئے آئندہ اجلاس فاطمہ جناح ہال میں منعقد کرایا جائے۔ جس پر کنوینئر ضلع کونسل ملک مسعود نذیر راجڑ نے یقین دہانی کرائی کہ آئندہ اجلاس فاطمہ جناح ہال میں ہی منعقد کئے جائیں گے اور ضلع کونسل کے اپنے ہال کی تعمیر پر بھی فوری توجہ دی جائے گی۔ ضلع کونسل کے رُکن ملک احسان اﷲ ٹوانہ نے اس امر پر احتجاج کیا کہ ضلع کونسل کی عمارات جس میں خوشاب کا شاپنگ سنٹر کی درجنوں دوکانیں شامل ہیں ابھی تک خالی نہیں کرائی گئیں۔ کنوینئر ضلع کونسل نے وضاحت کی کہ متعلقہ فریقین کو باقاعدہ نوٹسز جاری کئے جا چکے ہیں اور ضلع کونسل کے شاپنگ سنٹر کے دوکانداروں نے یکم مئی تک مہلت حاصل کر رکھی ہے۔ ملک احسان اﷲ ٹوانہ نے کہا کہ ہم ضلعی ایوان میں مخالفت برائے مخالفت کی پالیسی نہیں اپنائیں گے اور کثرت رائے کا احترام کر کے ضلع کونسل کے وقار اور تشخص کو بلند کریں گے۔ ضلع کونسل کے رُکن سردار علی حسین بلوچ نے ایک قرار داد پیش کی جس میں مطالبہ کیا گیا کہ علاقہ تھل میں ژالہ باری سے متاثرہ فصلات کے مالکان کو مالیہ‘ زرعی قرضہ جات اور دیگر واجبات معاف کرائے جائیں۔ ایوان نے یہ قرار داد اتفاقِ رائے سے منظور کر لی۔ ضلع کونسل کے رُکن تیمور خان اعوان نے ارکانِ ضلع کونسل کے اعزازیہ کو ناکافی قرار دیتے ہوئے کہا کہ ارکان کا اعزازیہ کم از کم 30ہزار روپے ہونا چاہیے۔ ممبر ضلع کونسل چوہدری خالد محمود نے کانفرنس ہال میں بانی پاکستان کی تصویر نہ لگانے پر اعتراض کیا جس پر کنوینئر نے اُنھیں یقین دہانی کرائی کہ اُنھیں قائد کی تصویر نظر آئے گی۔ ضلع کونسل کے ایوان نے کثرت رائے سے میاں محمد نواز شریف سے اظہارِ یکجہتی کی قرار داد بھی منظور کی اور عدالت عظمیٰ کے فیصلہ کو سراہا یہ قرار داد ارکانِ ضلع کونسل ملک طارق اعوان اور امیر حیدر سنگھا نے پیش کی تھی اس موقع پر پی ٹی آئی سے وابستہ ممبر ضلع کونسل علی حسین بلوچ نے کہا کہ عدالت عظمیٰ کے دو سینئر ججز نے وزیراعظم کو نااہل قرار دیا ہے جبکہ تین ججوں نے مزید تحقیقات کرانے کا حکم جاری کیا اس صورتحال میں دراصل کامیابی عمران خان کو ملی ہے۔ ضلع کونسل کے رُکن ملک ہادی بخش اعوان کی پیش کردہ قرار داد بھی اتفاقِ رائے سے منظور کی گئی جس میں وادی سون کے جنگلات کے بے دریغ کٹاؤ پر دفعہ 144کے تحت پابندی لگانے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔ اجلاس میں گذشتہ اجلاس کی کاروائی کی توثیق کے موقع پر ممبر ضلع کونسل امیر حیدر سنگھا نے کاروائی کی توثیق پر اعتراض کیا جس پر کنوینئر ضلع کونسل ملک مسعود نذیر راجڑ نے بتایا کہ قانون کے مطابق توثیق کے عمل میں صرف وہ ارکان حصہ لے سکتے ہیں جو گذشتہ اجلاس میں موجود تھے۔ اگر وہ پہلے اجلاسوں میں موجود ہوتے تو تمام صورتحال سے آگاہ ہوتے۔ امیر حیدر سنگھا نے مختلف تحریری درخواستیں دیں جن میں گذشتہ اجلاسوں کی کاروائیوں پر اعتراض کرتے ہوئے اُنھیں کمیٹیوں میں شامل کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔ اجلاس کے اختتام پر ملک امیر حیدر سنگھا نے کہا کہ اُن کا چیئرپرسن ضلع کونسل سے کوئی ذاتی اختلاف نہیں اُن کے گروپ کو محض اس امر پر اعتراض ہے کہ وہ ضلعی ایوان میں پی ٹی آئی کے ارکان کو اہمیت دیتی ہیں اور مسلم لیگی ارکان کو نظر انداز کیا جاتا ہے۔ 

;
ضلع کونسل کے اجلاس میں پانامہ فیصلے کی بازگشت ضلع کونسل کے اجلاس میں پانامہ فیصلے کی بازگشت Reviewed by Khushab News on 7:54:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.