پنجابی بیت بازی۔۔۔از:نازاوکاڑویؔ

تبصرہ:محمدنعیم یادؔ،جوہرآباد
مبارک باد اور تعظیم کے قابل ہیں وہ لوگ ، جو روز پنجابی زبان کے سکڑتے ہوئے دائرے کو محسوس کرنے کے باوجود، الیکٹرانک میڈیا کے چکاچوند میں ، ادب کے تئیں افراد کی کم ہوتی ہوئی دلچسپی کا درک رکھنے کے باوجود ،پنجابی زبان میں تحقیق وتخلیق کے کام کو جاری رکھ کر نئی نسل
تک اَدب کو پہنچانے کا کام بخوبی سرانجام دے رہے ہیں۔ ظاہر ہے اس صارفی معاشرے میںاسے دیوانگی ہی تو کہا جاسکتا ہے ۔ لیکن یہ ایسی دیوانگی ہے جس پر اس فرزانگی کو بے ساختہ قربان کیا جاسکتا ہے جو محض سود و نفع کا لحاظ کرنا سکھاتی ہے ۔کسی نے کیا خوب کہاہے کہ’’کسی بھی زبان یا اس کے اَدب کی تاریخ درجہ تکمیل کو نہیں پہنچ سکتی، جب تک اس کے گمشدہ اوراق کا سراغ نہ لگایا جائے یا اس کے منتشر شیرازے کو مجتمع نہ کیا جائے۔ ‘‘
دَورِ حاضر میں پنجابی اَدب کی ترویج وترقی میں ایسے بے لوث لوگوں میں نازاوکاڑویؔ جی کا نام کسی تعارف کا محتاج نہیں ہے جو پچھلے کئی سالوںسے پنجابی زبان کی ترویج وترقی کے لیے نہ صرف تحلیقی قوت کو بروئے کارلا تے ہوئے اپنی خدمات سرانجام دے رہے ہیں بلکہ تحقیقی صلاحیتوں کو بروئے کار لا کر ایسااَدب پیش کرنے کی کوشش میں سرگرداں ہیں جو رہتی دنیا تک قائم رہ سکے۔حال ہی میں ان کی کتاب’’پنجابی بیت بازی‘‘شائع ہوکر میرے تک پہنچی تو ازحدمسرت ہوئی۔اس سے قبل پنجابی زبان میں بیت بازی کے حوالے سے کوئی کام نہیں ہواتھا۔نازاوکاڑوی جی نے جس خوش اسلوبی سے اس تحقیقی کام کو پایۂ تکمیل تک پہنچایا ہے وہ ان کی پنجابی زبان سے عشق کا منھ بولتا ثبوت ہے۔
کتاب’’پنجابی بیت بازی‘‘ میں نازاوکاڑوی جی نے حروفِ تہجی کے حساب سے شاعروں کی بڑی دنیا سمیٹی ہے ۔استاد دامنؔ،صائم چشتیؔ،عاشق رحیلؔ، ڈاکٹریونس احقرؔ،صوفی غلام تبسم،پیرفضل شاہ گجراتیؔ،فرحت عباس شاہ،ڈاکٹر وزیر آغا،ڈاکٹر انعام الحق جاوید،ڈاکٹرصغریٰ صدفؔ اورنہ جانے کتنے شعراکی شاعری کو سمیٹ کرشعروں کا خوبصورت مینابازارلگایاہے ۔اس کتاب میں نازاوکاڑوی جی کی فِکر،ذہانت اورتحقیق کا وہ رَس موجود ہے جو ہر قاری کو ان شعراکے اشعارپڑھنے کے بعدیہ کہنے پہ مجبورکردیتا ہے کہ’’ کاش !میں یہ کام کرسکتا۔‘‘
www.khushabnews.com
عربی زبان کے ایک بڑے نقّاد سے کسی نے پوچھاتھا کہ ’’آپ کی نظر میںسب سے اچھا شعر کون سا ہے ؟‘‘
نقّاد نے جواب دیا۔ ’’ وہ شعر جسے پڑھنے یا سننے کے بعد ہر کوئی یہ کہنے لگے کہ ایسا تو میں بھی کَہ سکتا ہُوں ، لیکن جب وہ کہنے کی کوشش کرے تو کَہ نہ پائے۔‘‘
’’پنجابی بیت بازی‘‘کوئی معمولی کام نہیں ہے بلکہ نازؔجی ان حالات میں یہ کتاب مرتب کرکے اس بات پہ مہرثبت کردی ہے کہ پنجابی زبان کے یہ بے لوث خدمت کارپنجابی زبان کی ترویج وترقی میں اپنا حصہ ڈالتے رہیں گے۔،مجھے یقین ہے کہ نازجی نے بیت بازی کی اس کتاب میں جن شعروں کا تڑکالگایا ہے ،قاری پنجابی زبان میں اس کا ذائقہ ضرور محسوس کرے گااورتخلیقی حسّیت اوربصیرت سے بھرپورپنجابی میں اپنی نوعیت کی یہ پہلی کتاب یقینامشعل راہ ثابت ہوگی اورمحر ک بنے گی۔ 
اس کتاب کی اشاعت پر میں نازاوکاڑوی جیؔ کو اپنے دل کی گہرائیوں سے مبارکباد دیتا ہوں ۔ خدا کرے کہ اس کتاب کو اعتبار کی سند ملے۔
ناشر:فجرپبلی کیشن
15/6فضل سٹریٹ پنج پیرروڈ نیومزنگ۔لاہور
042-37595100
;
پنجابی بیت بازی۔۔۔از:نازاوکاڑویؔ پنجابی بیت بازی۔۔۔از:نازاوکاڑویؔ Reviewed by Khushab News on 9:18:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.