فوج کیساتھ 22سال پرانا اراضی کیس 13سال سے سپریم کورٹ میں پڑا ہے

‏خوشاب نیوز ڈاٹ کام) صوبائی وزیر آثار قدیمہ ملک محمد آصف بھا نے کہا ہے  کہ خوشاب کےشہریوں کےحقوق میں کسی رکاوٹ کو برداشت نہیں کرینگے اور عوام کی خدمت کرتےرھیں گےآرمی کی ملکیت زمین پر قبضہ کی افواہیں بے بنیاد ہیں پاکستان آرمی کے حکام کو چند مفاد پرست لوگوں نے غلط بیانی کرکے سپورٹس جمنیزیم کی دیوار گروا دی ۔یہ معاملہ 1996 سے فوج کے ساتھ چل رہا ہے اور ۔تمام عدالتوں سے یہ  کیس جیتا اور اب 2005 سے یہ کیس سپریم کورٹ میں پڑا ہے جہاں اسکی ایک بھی سماعت نہیں ہوئی ۔ایوب بھا ہاکی سٹیڈیم میں اپپنے سیکڑوں ساتھیوں کے ہمراہ ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے کہا کہ متذکرہ اراضی 1996 میں غلام حیدر وائیں کے دور میں سپورٹس بورڈ کے نام ہوئی جس کے تمام کاغذات و انتقال ہمارے پاس موجود ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہسال 2000 میں گرلز ڈگری کالج کی عمارت تعمیر کی گئی ۔ عوامی مفاد کے منصوبے اور عوامی خدمت کا سلسلہ جاری رہے ساڑھے سات کروڑ کی لاگت سے نوجوانوں کیلئے سپورٹس جمنیزیم ضرور تعمیر کریں گے ۔ایک سوال کے جواب میں ملک آصف بھا نے کہا کوئی ایک مثال دے ہم نے مخالفین کیخلاف پولیس  استعمال کی اور کسی کیخلاف  جھوٹے مقدمے بنوائے۔ اس موقع پر سینٹر ڈاکٹر غوث  خان نیازی نے کہا کہ اسطرح  تو مارشل لا دور میں بھی نہیں ہوتا جس طرح  فوج کے جوانوں نے آکر لاکھوں کی گرانٹ سے تعمیر کی گئی سرکاری دیوار گرائی انہوں نے کہا کہ پاک آرمی کی اعلی قیادت سے اپیل کرتے ہیں کہ دیوار گرانے کے واقعہ کا نوٹس لیںاس موقع پر وائس چئرمین ضلع کونسل خوشاب مسعود نذیر راجڑچئرمین ایم سی ایوب بھا خوشاب چئیرمین ایم سی ۔ جوہرآباد ملک ملک اشرف اعوان بھی موجود تھے۔ پریس کانفرنس کے دوران صوبائی وزیر کے سینکڑوں حامی انکے حق میں بار بار نعرہ بازی کرتے رہے جبکہ پریس کانفرنس کے اختتام پر بلدیہ جوہرآباد ملک اشرف اعوان نے شہری اتحاد کے دلدار بلوچ اور ملک فخر اعوان کے خلاف سخت زبان استعمال کرتے 
ہوئے انکے خلاف نعرے بھی لگوائے اور انہیں نعروں کی صورت میں باقاعدہ للکارتے رہے۔

;
فوج کیساتھ 22سال پرانا اراضی کیس 13سال سے سپریم کورٹ میں پڑا ہے فوج کیساتھ 22سال پرانا  اراضی کیس 13سال سے سپریم کورٹ میں پڑا ہے Reviewed by Khushab News on 9:53:00 PM Rating: 5

کوئی تبصرے نہیں:

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.